Library Sindh Study FG Study Punjab Study
PakStudy :Yours Study Matters
about-fgstudy.com

Scientist Stephen Hawking dies at 76

ZAHRAOFFICE3

  • *
  • 26
  • +0/-0
  • Gender: Female
Scientist Stephen Hawking dies at 76
« on: March 14, 2018, 02:25:50 PM »
LONDON: Renowned British physicist Stephen Hawking, whose mental genius and physical disability made him a household name and inspiration across the globe, has died at age 76, his family said Wednesday.
Hawking, whose 1988 book “A Brief History of Time” became an unlikely worldwide bestseller and cemented his superstar status, dedicated his life to unlocking the secrets of the Universe.
His genius and wit won over fans from far beyond the rarified world of astrophysics
He died peacefully at his home in the British university city of Cambridge in the early hours of Wednesday morning. “We are deeply saddened that our beloved father passed away today,” professor Hawking’s children, Lucy, Robert, and Tim said in a statement carried by Britain’s Press Association news agency.
“He was a great scientist and an extraordinary man whose work and legacy will live on for many years.”
Hawking defied predictions he would only live for a few years after developing a form of motor neurone disease in 1964 at the age of 22.
The illness gradually robbed him of mobility, leaving him confined to a wheelchair, almost completely paralysed and unable to speak except through his trademark voice synthesiser.
“His courage and persistence with his brilliance and humour inspired people across the world,” the family said. “He once said, ‘It would not be much of a universe if it wasn’t home to the people you love.’ We will miss him forever.”
Born on January 8, 1942, Stephen William Hawking became one of the world’s most well-regarded scientists, earning comparisons with Albert Einstein and Sir Isaac Newton.
http://siyasat.pk/

AKBAR

  • *****
  • 3759
  • +1/-1
  • Gender: Male
    • pak study
معروف سائنسدان اسٹیفن ہاکنگ انتقال کر گئے
معروف برطانوی سائنسدان اسٹیفن ہاکنگ 76 برس کی عمر میں انتقال کر گئے، انہیں البرٹ آئن اسٹائن کے بعد صدی کا دوسرا بڑا سائنس دان تصور کیا جاتا ہے۔
اسٹیفن ہاکنگ کے بچوں لوسی، روبرٹ اور ٹم نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ’ہم بہت غمزدہ ہیں کہ آج ہمارے والد جہاںِ فانی سے کوچ کرگئے‘۔
انہوں نے کہا کہ ’وہ ایک عظیم سائنسدان اور غیرمعمولی شخصیت کے حامل تھے جن کا کام برسوں تک مثالی رہے گا‘۔
واضح رہے کہ اسٹیفن ہاکنگ طویل عرصے تک موت سے لڑتے رہے انہیں موٹورنیورون بیماری لاحق تھی جس کے باعث ان کا پورا جسم مفلوج ہو گیا تھا لیکن وہ دماغی اعتبار سے بھرپور صحت مند تھے۔
انہیں بے جان کردینے والا مرض 21 سال کی عمر میں اس وقت لگا جب وہ کیمبرج یونیورسٹی میں زیر تعلیم تھے۔
اسٹیفن ہاکنگ کو 1988 میں اس وقت مقبولیت ملی جب ان کی تصنیف ’وقت کی مختصر تاریخ‘ منظر عام پر آئی اور دنیا بھر میں 1 کروڑ سے زائد کتابیں خریدی گئی
بعدازاں انہوں نے دنیا کے وجود میں آنے سے متعلق سوالات پر مشتمل بلیک ہولز اور بگ بینگ تھیوری کے تصور میں جدید رحجانات پیدا کیے۔
اسٹیفن ہاکنگ اپنی کمال صلاحیتوں کے باعث گزشتہ 30 برسوں سے کیمبرج یونیورسٹی میں علم الریاضی کے معلم رہے اور 2009 میں ریٹارئرڈ ہو کر تھیوریٹکل کاسمولوجی سینٹر کے ڈائریکٹر برائے تحقیق مقرر ہوئے۔
70 کی دہائی میں اسٹیفن ہاکنگ کا جسم ان کا ساتھ چھوڑ گیا اور وہ ویل چیئر پر آگئے اور اپنی تمام کامیابیوں کا سفر ویل چیئر پر بیٹھ کر ہی طے کیا۔
اسٹیفن ہاکنگ اپنی بات کہنے کے لیے سیدھے ہاتھ گال کو معمولی سی حرکت دیتے تھے اور انہیں بات سمجھنے کے لیے کمپیوٹر کی مدد حاصل رہتی تھی۔
ماہرین نے اسٹیفن ہاکنگ کے چشمے پر ایک سینسر نصب کیا اور اسے دائیں گال کی حرکت سے جوڑ دیا تھا، اسٹیفن دائیں گال کو حرکت دیتے اور مطلوبہ حرف کمپیوٹر اسکرین پر الگ سے نمایاں ہوجاتا۔
اسٹیفن ہاکنگ کو ایک جملہ ترتیب دینے میں تقریباً 10 منٹ لگتے تھے۔
ان کی آخری تصنیف ’دی گرینڈ ڈیزائن‘ 2010 میں شائع ہوئی۔
حوالہ: یہ خبر ڈان نیوز  ڈاٹ ٹی وی ویب سائٹ پر مورخہ 14 مارچ 2018 کو شائع ہوئی
https://www.dawnnews.tv/news/1075051/