Library Sindh Study FG Study quiz Punjab Study
PakStudy :Yours Study Matters
11th Class Result BIEK Karachi-Board 2019>>

Maulana Hasrat Mohani A Great Writer

Offline AKBAR

  • *****
  • 3977
  • +1/-1
  • Gender: Male
    • pak study
Maulana Hasrat Mohani A Great Writer
« on: May 14, 2010, 06:23:21 PM »
Maulana Hasrat Mohani A Great Writer

Maulana Hasrat Mohani a number of personalities in the history of our continent which is karnamh do. Has been written on them and will be written. We have not seen such a unique personality if we factor in a personality see the virtues of his countless side go out.

Day expressed his regret at muhany Development Association organized a ceremony at Pakistan's Urdu Speaking shransary professor did. They said that Maulana a blndpayh writer, political leader, poet and true journalist who appears everywhere in the forefront . Maulana British did not like slavery and the English resistance against the government always doing the same reason they had to go to jail several times. Prof. Seher Ansari said Maulana loved the idea of change in Spin and Spin political topics tied in political issues and topics that we can explain how high-Ghazal and the later poets progressive forward.

 Addressing the ceremony, President Anjuman Maulana Aftab Ahmed Khan said that a multi aljhat regret muhany personality, political leader, journalist and freedom for high payh a personality fight against the British when one was not ready to say he Most of the time dared flag of freedom and went to jail. He said that India's entire life, male and elderly people and the world are busy improving their end. آزادیٴ firmly believe they were doing and always adheres to. We regret if our leaders make today, surely we can get a clear destination. ceremony Riding Zafar, Maulana Anwar Hameed and rehabilitation of the donation also regret muhany muhany personality expressed their views about various aspects. Later, in association Honorary Vice reliable Hassan Zahir thanked the guests spent amsal under ATI has published 14 books.

مولانا حسرت موہانی بلند پایہ ادیب

مولانا حسرت موہانی کا شمار ہماری برصغیر کی تاریخ کی ایسی شخصیات میں ہوتا ہے جو کارنامہ انجام دیتے ہیں۔ ان پر بہت کچھ لکھا جا چکا ہے اور لکھا جاتا رہے گا۔ایسی منفرد شخصیت ہم نے نہیں دیکھی کہ کسی شخصیت میں اگر ہم ایک پہلو دیکھتے ہیں تو ان کی خوبیوں کے بے شمار پہلو نکلتے چلے جاتے ہیں۔

اس کا اظہار یوم حسرت موہانی پر انجمن ترقی اردو پاکستان کے زیراہتمام منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر سحرانصاری نے کیا۔انہوں نے کہا کہ مولانا ایک بلندپایہ ادیب،سیاسی رہنما،شاعر اور سچے صحافی تھے جو ہر جگہ صف اول میں نظر آتے ہیں۔مولانا کو انگریزوں کی غلامی پسند نہ تھی اور انگریزی حکومت کے خلاف وہ ہمیشہ مزاحمت کرتے رہے اور اسی وجہ سے انہیں کئی بار جیل جانا پڑا۔پروفیسر سحر انصاری نے کہا کہ مولانا نے غزل میں محبوب کا تصور تبدیل کیا اور سیاسی موضوعات کو غزل میں باندھا کہ سیاسی موضوعات اور مضامین کو ہم اعلیٰ غزل میں کیسے بیان کر سکتے ہیں اور اسے بعد میں ترقی پسند شعراء نے آگے بڑھایا۔

 تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر انجمن آفتاب احمد خان نے کہا کہ مولانا حسرت موہانی ایسی کثیر الجہات شخصیت، سیاسی قائد، بلند پایہ صحافی اور آزادی کے لیے لڑنے والی شخصیت تھے کہ جب کوئی انگریزوں کے خلاف بولنے کے لیے تیار نہ تھا انہوں نے اس وقت نہایت جرأت سے مکمل آزادی کا جھنڈا اٹھایا اور جیل چلے گئے۔ انہوں نے کہا کہ ساری زندگی یہ مرد بزرگ ہندوستان کے لوگوں کی دنیا اور اپنی عاقبت سنوارنے میں مصروف رہے۔وہ آزادیٴ کامل پر یقین رکھتے تھے اور ہمیشہ اس پر کاربند رہے۔ہم اگر حسرت کو آج اپنا رہنما بنائیں تو یقیناً ہمیں روشن منزل مل سکتی ہے۔ تقریب سے مجیب ظفر،انوار حمیدی اور مولانا کی پرنواسی عطیہ موہانی نے بھی حسرت موہانی کی شخصیت کے مختلف پہلوؤں کے بارے میں اظہار خیال کیا۔ بعد ازاں انجمن کے اعزازی نائب معتمد حسن ظہیر نے مہمانوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے بتایا انجمن کے تحت امسال14 کتابیں شائع ہو چکی ہیں ۔