Library Sindh Study FG Study Punjab Study
PakStudy :Yours Study Matters

مسائل حل نہ ہونے پر سندھ پروفیسرز اینڈ لیکچررز ایسوسی ایشن سپلاآج یوم سیاہ منائ

Offline iram

  • *****
  • 3841
  • +16/-3
  • Gender: Female

 
سندھ پروفیسرز اینڈ لیکچررز ایسوسی ایشن سے کئے گئے تمام وعدوں اور معاہدوں پر قائم ہوں پیر مظہر الحق
اساتذہ سے کئے گئے تمام وعدے پورے کریں گے، پیر مظہر الحق
   
کراچی (اسٹاف رپورٹر) سینئر صوبائی وزیر تعلیم پیر مظہرالحق نے کہا ہے کہ میں سندھ پروفیسرز اینڈ لیکچررز ایسوسی ایشن (سپلا) سے کئے گئے تمام وعدوں اور معاہدوں پر قائم ہوں مگر سپلا کے رہنماؤں نے پریس کانفرنس کر کے معاہدے کی خلاف ورزی کی ہے۔ جنگ سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ وعدے کے مطابق مسائل حل ہو رہے تھے، سپلا کے رہنماؤں کو جبری رخصت پر بھیجنے کا نوٹیفکیشن واپس لیا گیا تھا اور اساتذہ تنظیم پر عائد پابندی کی اپیل واپس لینے کی سمری وزیراعلیٰ سندھ کو منظوری کے لئے بھیج دی گئی تاہم وہ چیزیں جن کا تعلق مالی معاملات سے ہے، میں ان کے بارے میں اکیلا کچھ نہیں کر سکتا، ان میں وقت لگے گا۔ سینئر وزیر تعلیم نے کہاکہ سپلا کے عہدیدار ایک طرف کہتے ہیں کہ ایڈہاک لیکچرار بھرتی نہ کرو مگر دوسری طرف کہتے ہیں کہ جو بھرتی ہو گئے انہیں مستقل کیا جائے۔ اصل میں جب سپلا کے انتخابات کا وقت قریب آتا ہے تو یہ احتجاج کرتے ہیں۔ انہیں اساتذہ کے مسائل سے کوئی دلچسپی نہیں۔ انہوں نے کہا کہ پہلے میں سپلا کے مطالبات پر کالج اساتذہ کے مسائل حل کرتا اور انہیں کریڈٹ ملتا مگر اب یہ کریڈٹ انہیں نہیں ملے گا۔ میں سندھ کے اساتذہ کے لئے سب کچھ خود کروں گا جس کا کریڈٹ پیپلزپارٹی کو ملے گا۔

شکریہ جنگ

Offline iram

  • *****
  • 3841
  • +16/-3
  • Gender: Female

 
سندھ پروفیسرز اینڈ لیکچرارز ایسوسی ایشن نے مسائل حل نہ ہونے پر23 جنوری سے احتجاجی تحریک چلانے کا اعلان کردیا
   
کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ پروفیسرز اینڈ لیکچرارز ایسوسی ایشن (سپلا) کے جنرل سیکریٹری پروفیسر لیاقت عزیز نے کہا ہے کہ عوامی حکومت میں اساتذہ کے مسائل حل نہ ہونے پر 23 جنوری سے احتجاجی تحریک کا آغاز ہوگا اور یہ تحریک 23 مارچ جاری رہے گی 23 جنوری کو صوبہ بھر کے کالجوں میں یوم سیاہ منایا جائے گا۔ 3 فروری کو نوڈیرو سے گڑھی خدا بخش تک ریلی نکالی جائے گی اور شہید ذوالفقار بھٹو اور ان کی بیٹی بینظیر بھٹو شہید کے مزار پر سپلا اپنے مطالبات پیش کرے گی۔ وہ منگل کو گورنمنٹ ڈی جے سائنس کالج میں امت السمیع‘ مرزا اطہر حسین‘ مظفر علی رضوی‘ شفقت جوکھیو‘ یعقوب چانڈیو‘ افتخار اعظمی‘ الطاف کھوڑو اور غضنفر شاہ کے ساتھ پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔

شکریہ جنگ

Offline iram

  • *****
  • 3841
  • +16/-3
  • Gender: Female
Sindh Professors and Lecturers Association (SPLA) plans two-month protest campaign

Karachi: The Sindh Professors and Lecturers Association (SPLA) has chalked out a two-month-long province-wide protest plan (from Jan 23 to March 27) to put pressure on the government to accept its demands.

Speaking at a news conference at the DJ Science College library, SPLA secretary-general Prof Liaquat Aziz said that his organisation did not wont to launch a protest campaign, but was forced to do so after the expiry of the Jan 15 deadline fixed earlier for the acceptance of the teaching community's demands.

"With a view to ensuring that peaceful atmosphere of the educational institutions of the province is not vitiated, we have decided not to boycott classes but to take out rallies and organise protest demonstrations, even if we are subjected to baton-charges by police," he said. Also present were other central leaders of the SPLA, including Prof Umat-us-sami, Prof Yaqoob Chandio, Prof Mirza Ather Hussain, Prof Muzaffar Rizvi and Prof Iftikhar Azmi.

The SPLA leaders said that they had now decided not to hold any negotiations with the officials of the education department until a notification concerning regularisation of service of all ad hoc lecturers was issued by the government.

Listing other demands, they called for the immediate withdrawal of the notification whereby a ban was imposed on college teachers' associations, issuance of posting orders to the lecturers selected by Sindh Public Service Commission, upgrade of college teachers on the pattern of universities, issuance of a notification relating to college teachers' promotion and move-over, filling up of all the 3,036 vacant posts in colleges across Sindh, approval of SNEs (Sanctioned New Establishment) of 29 colleges of the province, abolition of the post of provincial director-general (Colleges), restoration of five directorates of colleges, immediate disbursement of payment under the heading of PhD and MPhil allowances and provision of health facilities to college teachers.

Spelling out the details of a two-month-long protest campaign, the SPLA leaders said that college teachers would start their campaign from Jan 23 by observing a 'black day' in colleges across Sindh, and a rally would be taken out from Govt College Naudero to Garhi Khuda Bux on Feb 3. Further, a general body meeting and rally would be organised at Sukkur's Govt College of Education on Feb 19, another rally would be taken out from Hyderabad's Muslim Govt Degree Science college on Feb 28, another general meeting would be held at DJ Science College on March 17 and later the participants of the meeting will hold a demonstration in front of the Sindh chief minister's house the same day, while hunger strike camps would be set up in Larkana, Sukkur, Hyderabad and Karachi on March 27 and protest demonstrations would be organised in each divisional headquarters of the province.

At the beginning of the conference, SPLA leaders criticised the Sindh education department for handing over the management of SMB Fatimah Jinnah College to a non-governmental organisation and demanded that the government immediately take back the control of this college and other schools given to the NGO.

They said that since it was the responsibility of the state to provide education to its citizens, NGOs showing interest in running government educational institutions be given land free of cost by the government and asked to set up their own schools and colleges, instead of handing over control to NGOs of those government schools and colleges which were located on a huge piece of land and were already imparting quality education to their students. Dawn

Offline iram

  • *****
  • 3841
  • +16/-3
  • Gender: Female
Sindh Professors and Lecturers Association (SPLA) claims refuted Sindh Education Minister Pir Mazharul Haq

Karachi: A spokesperson for Sindh Education Minister Pir Mazharul Haq refuted the claims of SPLA. He said that Haq is serious about resolving the issues of the teachers and the delays are being caused by the lack of funds. The spokesperson further said that Haq had already resolved two important demands of SPLA that included the resumption of duties of the teachers sent on forced leave by the last government. He also said that Haq made sure that a summary was sent to the Sindh chief minister to repeal the ban regarding the appeal filed in the Supreme Court to impose a ban on SPLA. Daily Times
....................

Offline iram

  • *****
  • 3841
  • +16/-3
  • Gender: Female

 
اساتذہ کے مسائل حل کئے جائیں، عزیز مدنی سندھ ٹیچرز فورم
   
کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ ٹیچرز فورم کی مرکزی مجلس عاملہ کا اجلاس پروفیسر عزیر احمد مدنی کی زیرصدارت ہوا جس میں اساتذہ کے مسائل کے حل کے سلسلے میں ارباب اختیارکی عدم دلچسپی پر تشویش کا اظہار کیا گیا۔ اجلاس میں اعلیٰ حکام سے اپیل کی گئی کہ وہ اساتذہ کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کریں۔


شکریہ جنگ

Offline AKBAR

  • *****
  • 3999
  • +1/-1
  • Gender: Male
    • pak study

 
مسائل حل نہ ہونے پر  سندھ پروفیسرز اینڈ لیکچررز ایسوسی ایشن سپلاآج یوم سیاہ منائے گی، منگل 3 فروری سے باقاعدہ تحریک کا آغاز ہوگا
   
کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ پروفیسرز اینڈ لیکچررز ایسوسی ایشن سپلا کے تحت صوبائی محکمہ تعلیم کی جانب سے مسائل حل نہ کئے جانے پر جمعہ 23 جنوری کو صوبے میں یوم سیاہ منایا جائے گا۔ اساتذہ بازوؤں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر تدریسی فرائض انجام دیں گے اور احتجاجی اجلاس منعقد کریں گے جبکہ منگل 3 فروری کو سپلا کے زیر انتظام نوڈیرو سے گڑھی خدا بخش تک پیدل مارچ کریں گے۔ شہید ذوالفقار علی بھٹو اور ان کی بیٹی شہید بے نظیر بھٹو کے مزار پر سندھ بھر کے اساتذہ فاتحہ خوانی اور اس کے بعد ان کے مزار پر اپنے مسائل کے حل کے لئے دعا کر کے اپنے مطالبات جمہوریت کے شہیدوں کے سامنے پیش کریں گے۔ جمعرات 19 فروری اساتذہ کا گورنمنٹ ایجوکیشن کالج سکھر میں اجلاس عام منعقد ہوگا جس کے بعد ریلی نکالی جائے گی اور احتجاجی مظاہرہ ہوگا۔ منگل 28 فروری گورنمنٹ مسلم کالج حیدرآباد میں پورے سندھ کے اساتذہ کا سالانہ کنونشن منعقد ہوگا جس کے بعد احتجاجی ریلی نکالی جائے گی۔ منگل 10 مارچ گورنمنٹ مسلم کالج حیدرآباد سے اساتذہ کے مسائل کے حل کے لئے احتجاجی ریلی اور پریس کلب حیدرآباد پر مظاہرہ ہوگا۔ منگل 17 مارچ کو ڈی جے سندھ گورنمنٹ سائنس کالج، کراچی میں کل سندھ اجلاس عام ہوگا جس کے بعد ریلی نکالی جائے گی اور چیف منسٹر ہاؤس تک مارچ ہوگا اور چیف منسر کو وزیرتعلیم پیر مظہر الحق کے جاری کردہ منٹس جس میں انہوں نے اساتذہ کے تمام مسائل حل کرنے کی یقین دہانی کرائی تھی پیش کئے جائیں گے اور مطالبات کی منظوری تک دھرنا دیا جائے گا۔

شکریہ جنگ